News

News

News 08 February 2019

طلبہ یونین پر لگائی گئی آمر مطلق کی پابندی کو ختم کیا جائے، قاسم شمسی

آئی ایس او پاکستان ہر فورم پہ طلبہ یونین بحالی کی جنگ لڑے گی،مرکزی صدر
طلبا یونین بحالی سے بہترین قیادت سامنے آئے گی ،مرکزی صدر
یونینز پر پابندی کے باعث مکالمہ کی فضاءختم ہوئی ،قاسم شمسی
امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی صدر سید قاسم شمسی نے طلبہ یونین پر پابندی کے 35سال مکمل ہونے پر لاہور میں طلبہ کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا طلبہ یونینز پر تین دہائیوں سے پابندی عائد ہے لیکن بدقسمتی سے نوجوانوں کے حقوق کے نام لیوا سیاسی جماعتوں نے جمہوری دور میں بھی بحالی کے لئے اقدامات نہیں کئے۔ قاسم شمسی نے کہا یونینز پر پابندی کے باعث مکالمہ کی فضاءختم ہوئی اور شدت پسندانہ واقعات میں اضافہ ہوا ہے فوری طور پر پابندی اٹھا کر طلبہ یونین کے الیکشن کروانا وقت کا تقاضہ ہے۔مرکزی صدر نے مزید کہا طلبا ہی وہ قوت ہیں جنہوں نے ملک بنانے میں اہم کردار ادا کیا تھا طلبا یونین کی بحالی بہترین طلبا قیادت سامنے آئے گی اور ملک و قوم کی ترقی کا سبب بنے گی۔مرکزی صدر نے کہا یونینز بحالی کا لولی باپ ہر جمہوری دور حکومت میں دیا گیا ہے نئی حکومت کو بحالی میں رکاوٹ کو دور کرتے ہوئے تعلیمی اداروں میں نصابی اور غیر نصابی سرگرمیوں کے اثرات ثمرات کا جائزہ بھی لیا جانا چاہیے اگر طلبہ تنظیموں کے خود احتسابی کے عمل کے ساتھ طلبہ کے جمہوری حقوق کی بحالی کے لئے اگر قواعد و ضوابط نئے بنانے کی ضرورت ہے تو بنانے چاہئیں، مگر طلبہ و طالبات کو جمہوری حقوق ملنے چاہئیں، تاکہ وہ معاشرے کو باصلاحیت مقرر، صالح قیادت دے سکیں۔ مرکزی صدر نے مطالبہ کیا کہ طلبہ یونین نہ صرف بحال کی جائے بلکہ اس کے الیکشن بھی کرائے جائیں۔یا د رہے کہ جنرل ضیا الحق نے طلبا کی مارشل لا کیخلاف تحریک کو روکنے کیلئے تعلیمی اداروں میں طلبا یونین پر 9فروری 1984کو پابندی عائد کی اور انہوں نے امن و امان کو وجہ بنایا۔

Read more...
Read 31 times
News 04 February 2019

منحوس ٹرائی اینگل کشمیر کی آزادی میں حائل ہے، سید قاسم شمسی مرکزی صدر

منحوس ٹرائی اینگل کشمیر کی آزادی میں حائل ہے، سید قاسم شمسی مرکزی صدر

امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی صدر سید قاسم شمسی نے یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے پیغام میں کہا ہے کہ منحوس ٹرائی اینگل کشمیر کی آزادی میں حائل سب سے بڑی رکاوٹ ہے، امریکہ اسرائیل اور بھارت کے متعصبانہ رویہ کی وجہ سے کشمیری آزادی کی نعمت سے محروم ہیں، انسانی حقوق کے علمبردار ادارے اور طاقتیں کشمیریوں کو ان کا بنیادی حق دلوانے میں جان بوجھ کر بے مروتی سے کام لے رہی ہیں جبکہ تمام انسانی حقوق کے ادارے کشمیر کی آزادی اور کشمیریوں کے حقوق کے لئے متفق ہیں امریکہ اسرائیل کے متعصبانہ رویہ کی بنیاد پر بھارت نے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کیا ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیری مسلمان بھائیوں کے ساتھ مذہبی و شعوری رشتہ ہے جو خون کے رشتے سے کہیں زیادہ مضبوط ہے، کشمیری مسلمانوں پر طویل عرصے سے ظلم وستم ڈھایا جا رہا ہے جو کہ انسانی تاریخ کی بدترین مثال ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مظلوم کشمیری عوام بھارتی فوجی درندوں کا شکار ہو رہے ہیںآئے روز کشمیری مسلمانوں کو قتل کیا جاتا ہے یا بغیر مقدمات سالہا سال قید و بند کا نشانہ بنایا جاتا ہے، اس کے باوجود اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی تنظمیں بھارتی مظالم پر خاموش ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر ایک انسانی مسئلہ ہے جس کے لئے تمام امت مسلمہ کو چاہئے کہ وہ متحد ہو کر کشمیرکی آزادی کے لئے آواز بلند کرے، بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح نے کشمیر کو وطن عزیز کی شہ رگ قرار دیا جبکہ شاعرمشرق ڈاکٹر علامہ محمد اقبال کے تصور پاکستان کے مطابق پاکستان قائم ہو گیا، جس کی تکمیل کشمیر کی آزادی کے بغیر مکمل نہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر پاکستانی حکمران اس مسئلہ کو سنجیدگی سے حل کرنے کی کوشش کرتے تو آج کشمیری عوام بھارتی مظالم سے چھٹکارا حاصل کر لیتے، بھارت اور امریکہ کا حالیہ گٹھ جوڑ پاکستان اور اسلام کے لئے خطرہ ہے، بھارت امریکہ کے ساتھ ملک بھر خطے میں بدامنی کی فضا پھیلانا چاہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئی ایس او پاکستان نے ہمیشہ دنیا کے ظالمین کے خلاف آواز اٹھائی ہے اور پاکستان کی نظریاتی اور جغرافیائی سرحدوں کی محافظ ہے، کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور بھارت سے اظہار برات کرتے ہیں مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ بھارتی تشدد اور ہٹ دھرمی آزادی کی جدوجہد کو ختم نہیں کر سکتا ہے، کشمیر ایک دن ضرور آزاد ہو گا کیونکہ کشمیری مظلوم قوم استقامت کا پہاڑ بن کر بھارتی مظالم کا سامنا کر رہی ہے۔

Read more...
Read 46 times
News 26 January 2019

مجلس عاملہ نے آئی ایس او پاکستان کی نئی مرکزی کابینہ کی منظوری دے دی

 پاکستان کی جامعات میں سیکولر طبقات طاقتور ہوچکے ہیں،مرکزی صدر
 
امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کی مجلس عاملہ کا چار روزہ اجلاس شاہ جمال لاہور میں جاری ہے اجلاس میں اراکین عاملہ نے کثرت رائے سے نئے مرکزی کابینہ کی منظوری دی۔
 
 مرکزی صدر برادر قاسم شمسی  نو منتخب کابینہ سے حلف لیں گے، مرکزی نائب صدر علی ضامن،سینئرمرکزی نائب صدر عدیل شجاع ،جنرل سیکرٹری عارف حسین ،سیکرٹری تعلیم طاہر حسین ،انچارج محبین فہیم جواد،ڈپٹی جنرل سیکرٹری شہنشاہ نقوی،نشرواشاعت سیکرٹری علی اشتر ،فنانس سیکرٹری سیماب حیدر ،سیکرٹری اطلاعات جلال حیدر ،امامیہ چیف اسکاٹس برادر زاہد مہدی منتخب ہوئے۔
 
اس موقع پر مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ پاکستان کی جامعات میں سیکولر طبقات طاقتور ہوچکے ہیں اور طلبا کو دینی تعلیمات سے دور کر رہے ہیں۔ اسلام کے حقیقی چہرے سے روشناس کروانا ہماری دینی و اخلاقی فریضہ ہے۔
 
ان کا کہنا تھا کہ آئی ایس او پاکستان اپنے قیام سے لیکر آج تک نوجوانوں کو صحیح فکر اسلامی سے متعارف کرانے میں اہم کردار ادا کر رہی ہے۔ جس کا نصب العین ہی یہی ہے کہ تعلیمات قرآن اور سیرت محمد و آل محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے مطابق نوجوان نسل کی زندگیوں کو استوار کرنا تاکہ وہ اچھے انسان اور مومن بن کر دین مبین کی سر بلندی اور مملکت خداداد پاکستان کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کر سکیں۔

Read more...
Read 76 times
News 24 January 2019

آئی ایس او پاکستان کی مجلس عاملہ کے چار روزہ اجلاس کا آغاز ہوگیا

آئی ایس او پاکستان کی مجلس عاملہ کے چار روزہ اجلاس کا آغاز ہوگیا۔

قومی مرکزی شاہ جمال لاہور میں آئی ایس او پاکستان کے مرکزی صدر سید قاسم شمسی کی سربراہی میں مرکزی مجلس عاملہ کا سال رواں کے پہلا اجلاس کا آغازہوگیا ہے چار روزہ اجلاس میں مرکزی کابینہ کی منطوری لی جائے گی تفصیلات کے مطابق مجلس عاملہ کے اجلاس میں 23ڈویژنز کے صدورواراکین عاملہ شریک سمیت اراکین مجلس نظارت کے علاوہ سینیئرز کی ایک بڑی تعداد شریک ہے۔

اجلاس میں آئی ایس او پاکستان کی مرکزی کابینہ کا اعلان کیا جائے گا اور حلف برداری کی تقریب بھی منعقد ہو گی اجلاس عاملہ کے تمام انتظامات مکمل کر لئے ہیں۔ اجلاس میں سالانہ پروگرام اور استحکام تنظیم کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

اجلاس میں جہاں آئی ایس او کے سابق مرکزی صدور کو شرکت کی دعوت دی گئی ہے وہاں سینئر برادران کو بھی مدعو کیا گیا ہے، جو شرکا کو اپنے تجربات سے آگاہ کریں گے اور اپنے تنظیمی دور میں پیش آنے والی مشکلات اور ان کے حل کے بارے میں بتائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کی مجلس عاملہ کا چار روز تک جاری رہنے والے اجلاس میں چاروں صوبوں، شمالی علاقہ جات، کشمیر اور فاٹا کے تمام ڈویژنز کے نمائندگان شرکت کریں گے۔

اجلاس کے پہلے روز علما کرام اور تنظیم کے سابقین بالخصوص مرکزی صدور اجلاس کے شرکا سے دینی، اخلاقی، تنظیمی اور ملکی و بین الاقوامی حالات پر گفتگو کریں گے آئی ایس او کے سالانہ پروگرام میں شعبہ تربیت، تعلیم، اسکاوٹنگ، مالیات، نشر واشاعت سمیت مختلف منصوبوں کی منظوری دی جائیگی امسال اجلاس میں تمام ڈویڑنل عہدیدران شریک ہونگے اور شعبہ جاتی امور کو زیر بحث لایا جائے گا۔

یاد رہے کہ مرکزی مجلس عاملہ آئی ایس او پاکستان کا اعلی اختیاراتی ادارہ ہے جس کے سال میں چار اجلاس منعقد ہوتے ہیں۔ مرکزی کابینہ کے تمام اراکین سمیت ہر ڈویژن سے دو نمائندگان اس مجلس کے رکن ہوتے ہیں اور تنظیم کے اعلی سطحی فیصلہ جات اور پالیسیاں یہاں پر ترتیب پاتی ہیں

Read more...
Read 183 times
News 09 January 2019

عزم نو رابطہ مہم کا آغاز ، تنظیم میں تحرک پیدا ہوگا،مرکزی صدر

مرکزی صدر کی ڈی جی خان میں سابقین سے '"عزم نو نشست "'
سابقین آئی ایس او شعبہ جات سے ادارہ جات کے سفر میں اہم کردار ادا کریں گے ،مرکزی صدر

امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان نے رواں سال میںکی ملک گیر عزم نو رابطہ مہم کا آغاز کردیا گیا ہے ۔رابطہ مہم کے تحت پہلے روز مرکزی صدر برادر سید قاسم شمسی نے ڈیرہ غازخان میں سابقین آئی ایس او پاکستان سے عزم نو نشست سے خطاب کیا ۔

مرکزی صدر نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 
سابقین آئی ایس او تنظیم کا انمول اثاثہ ہیں، جن کی تعداد میں روز روز اضافہ ہو رہا ہے۔ سابقین آئی ایس او ،تنظیم کی مضبوطی ،ترقی، شعبہ جات سے ادارہ جات کے سفر میں اپنااہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔
 

برادر قاسم شمسی کا مزید کہنا تھا کہ عزم نو رابطہ مہم تنظیم میں تحرک پیدا کرے گا طلبا کی تعلیمی و تربیتی ،مالی معاونت کے علاوہ ممبر سازی میں اضافہ ہوگاسابقین آئی ایس او ملک و ملت کا سرمایہ ہیں جس قوم کے پاس نظریاتی،فکری اور دین اسلام کی تعلیمات پر مشتمل افراد موجود ہوں دنیا کی کو طاقت شکست نہیں دے سکتی۔

مرکزی صدر نے امامیہ نیوز کو عزم نو مہم کے بارے بتایا کہ سابق مرکزی صدور اور ان کی مرکزی کابینہ کے عہدیدران پر مشتمل وفود مختلف ڈویژن میں سابقین آئی ایس او پاکستان سے ملاقات کریں گے اور انہیں یونٹ اراکین سے رابطہ کو مضبوط کریں گے ،عزم نو رابطہ مہم کا یہ سلسلہ پنجاب سے ہوتا ہوا ملک بھر میں پھیل جائے گا۔

Read more...
Read 136 times
News 07 January 2019

حکام بالا اسرائیل نوازی سے باز نہ آئے توعوام کے سخت ردعمل کا سامنا کرنا ہوگا، مرکزی صدر پریس کانفرنس

حکام بالا اسرائیل نوازی سے باز نہ آئے توعوام کے سخت ردعمل کا سامنا کرنا ہوگا، مرکزی صدر پریس کانفرنس

سید محمد قاسم شمسی مرکزی صدر امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان اور ڈویژنل صدر رضی عباس شمسی نے مظفر آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ آج کشمیرفلسطین، افغانستان، شام، یمن، بحرین، عراق سمیت کئی ممالک میں ہزاروں مسلمانوں کو قتل کرایا جا رہا ہے، دنیا میں جتنی بھی آزادی کی تحریکیں ہیں، ان کیخلاف عالم استعمار متحد ہوچکا ہے، امریکہ اور اس کے حواریوں کو امت مسلمہ کی سیاسی بیداری پسند نہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں گورنر راج کے بعد صدارتی نظام نافذ کرنا بھارتی بوکھلاہٹ کی دلیل ہے۔ نہتے کشمیریوں کی جدوجہ آزادی کو ظلم و دہشتگردی کے ذریعہ دبانا ممکن نہیں۔

بھارتی فوج نے کشمیریوں کیخلاف کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال میں شدت پیدا کر دی۔ ایک ہفتہ میں 30 سے زائد کشمیری شہید کئے گئے، دنیا خاموش تماشائی نہ بنے۔ یہ وقت مظلوم کشمیریوں کیساتھ کھڑے ہونے کا ہے۔ بھارتی فوج نے کشمیر میں آپریشن آل آﺅٹ کے نام پر بدترین ظلم و دہشتگردی کا بازار گرم کر رکھا ہے۔ کشمیر کی آزادی سے پورے خطہ کے حالات تبدیل ہوں گے۔ شہداء کی قربانیوں کے نتیجہ میں تحریک آزادی عروج پر پہنچ چکی۔ کشمیر میں ایک بار پھر ظلم کی قیامت ڈھائی جارہی ہے بھارت زیادہ دیر تک اپنا غاصبانہ قبضہ برقرار رکھنے میں کامیاب نہیں ہو سکتا۔ بھارت کشمیریوں پر بدترین مظالم ڈھا رہا ہے لیکن بین الاقوامی دنیا اندھی ہو چکی ہے۔

اب تو کشمیر میں جنازوں پر فائرنگ ہو رہی ہے۔ پیلٹ گن اور کیمیائی ہتھیار استعمال کئے جا رہے ہیں۔ اس کے باوجود کشمیری نظریہ پاکستان سے پیچھے ہٹنے کیلئے تیار نہیں ہیں عالم اسلام کو اتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے کشمیر، یمن اور فلسطین جیسے بڑے ہدف کیلئے اپنے اختلافات کو بھلانا ہوگا تاکہ عالم اسلام کے حقیقی مسائل کو حل کیا جا سکے۔ کشمیر کے مسئلہ کو جان بوجھ کر فراموش کیا گیا تاکہ سامراجی قوتیں اس سے فائدہ حاصل کر سکیں۔ اسلامی ممالک میں صرف آیت اللہ خامنہ ای کی پالیسی واضح اور اصولی ہے کشمیر ہر مظلوم مسلمان کی آواز ہے، ہر ایک کو کشمیر کے مسئلہ کیلئے بھرپور کردار ادا کرنا چاہئے۔

مسئلہ کشمیر اور مسئلہ فلسطین مسلم امہ کے دو ایسے مسائل ہیں، جو عالمی برادری کے جانبدارانہ رویئے کے باعث دن بہ دن گھمبیر ہوتے چلے جا رہے ہیں، صرف فلسطین و کشمیر ہی نہیں بلکہ شام، افغانستان، یمن، پاکستان، جہاں بھی سامراجی طاقتوں یا ان کے ایجنٹوں کا موقع ملتا ہے، مسلم آبادیوں میں سامراجی اور غاصب طاقتوں کی جانب سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں، کشمیریوں کی ایک پوری نسل، آزادی کی جدوجہد پہ قربان ہوچکی ہے، جدید دنیا کو جن مسائل کا سامنا ہے، مسئلہ کشمیر و فلسطین بھی ان میں سے ایک ہے اب وقت ہے کہ پوری امت مسلمہ یکجان ہو کر یمن، فلسطین و کشمیر کے مظلومین کے حق میں آواز بلند کرے اور عالمی برادری کو کشمیریوں کے حق میں بات کرنے پر مجبور کرے۔

حکومت امیگریشن قوائد کی آڑ میں اسرائیلی شہریوں کی اجازت پر وضاحت پیش کرے اسرائیل کو تسلیم ناکرنے اور اسرائیل سے خفیہ یا اعلانیہ تعلقات کی بھرپور نفی کرتے ہوئے رسمی طور پر بیانیہ بھی جاری کرے گزشتہ دوماہ سے اسرائیل نوازی کی جارہی ہے جس کو بعد میں غلطی قراردیا جاتا ہے حکومت وقت یہ جان لے کہ ہم اسرائیل کو کسی بھی صورت قبول نہیں کریں گے اسرائیلی طیارے کی آمد ِپارلیمنٹ میں اسرائیل کے حق میں تقریر ِمیڈیا پر اسرائیل کے حق میں ٹاک شو اور اب امیگریشن قوائد کی آڑ میں اسرائیلوں کی آمد کی اجازت دیناغلطی نہیں بلکہ ایک منظم سازش کے تحت اسرائیل کو مظور کرنے کی ناکام کوشش کی جاری ہے جس کو ہرگز برداشت
نہیں کیا جائے گا ایسی گھناونی حرکتیں قائداعظم اور علامہ اقبال کے نظریات و افکار کو نابود اور فلسطین کاز کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہیں آئی ایس او پاکستان کے کارکنان القدس کو ہرگز فراموش نہیں ہونے دیں گے۔

فلسطین کا مسئلہ آج بھی عالم اسلام کا اہم ترین مسئلہ ہے۔ مسئلہ فلسطین صرف عرب دنیا کا ہی نہیں بلکہ پوری مسلم امہ اور انسانیت کا اولین مسئلہ ہے اور اس کے منصفانہ حل کے بغیر خطے سمیت عالمی امن قائم نہیں ہو سکتا ہے فلسطین صرف فلسطینیوں کا وطن ہے، یہودیوں کا اس میں کوئی حق نہیں۔ہم ہرگز کسی بھی صورت اسرائیل کو تسلیم نہیں کریں گے۔وقت کے حکمران ایسے مکروہ فیصلوں سے باز رہی۔ 
قصہ پارینہ قرار دی گئی دہشت گردی واپس پلٹ رہی ہے اور ایک ہفتے میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں اضافہ ہورہا ہے۔

گزشتہ ہفتے کے دوران مختلف واقعات میں محب وطن پاکستانیوں کی ٹارگٹ کلنگ کے واقعات پیش آئے گزشتہ تین دہائیوں سے ہم نہ صرف دہشت گردی کا شکار ہیں بلکہ ریاستی ادارے بھی ہمارے لوگوں کو غائب کرنے میں مصروف ہیں۔دہشت گردی کا ناسور ایک بار پھر سر اٹھارہا ہے دہشت گردی کے بڑھتے ہوئے واقعات انتہا پسندوں اور سہولت کاروں کے خلاف بھرپور آپریشن کا تقاضہ کر تے ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ کے موثر نتائج اس وقت تک حاصل نہیں ہو سکتے انہوں نے کہا ہزاروں پاکستانیوں کے قاتل اور کالعدم مذہبی جماعتوں سے دوستانہ تعلقات کو بڑھاوا دیا جارہا ہے کالعدم تنظیموں سے وابستہ عناصر کو ملک دشمن قرار دے کر ان کے خلاف بھرپور کارروائی کی جائے یہ کیسی مثالی حکومت ہے جس میں ایک ہی مکتب و فکر کے افراد کو ہی بار بار نشانہ بنایا جارہا ہے ہم ان واقعات کے ذمہ داروں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا۔

Read more...
Read 145 times
News 04 January 2019

آئی ایس او نے تعلیمی اداروں میں منشیات کیخلاف مہم کو خوش آئند قرار دیدیا

امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے رہنما شہنشاہ نقوی نے نجی و سرکاری تعلیمی اداروں میں نشہ آور اشیاءکی روک تھام کے حوالے سے آگاہی مہم چلانے کو خوش آئند قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشرے کا بہترین طبقہ اخلاقی قدر کھو چکا ہے اور نشے سمیت دیگر غیر اخلاقی سرگرمیوں میں ملوث ہو چکا ہے، یہ طلباء اور جامعات کے ماحول دونوں کیلئے خطرے سے خالی نہیں۔

انہوں نے کہا کہ نشے میں مبتلا یونیورسٹیز کے سیکڑوں طلبہ کی زندگیاں دائوپر لگ چکی ہیں، آئے روز میڈیا پر آنیوالی رپورٹس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ جامعات میں طلباء و طالبات میں نشے کے استعمال کا رجحان بڑھتا جا رہا ہے، حکومت کو اس کے تدارک کے حوالے سے عملی اقدامات اٹھانے چاہئے۔

شہنشاہ نقوی کا کہنا تھا کہ تعلیم کیساتھ ساتھ تربیت بھی نوجوان طبقے کیلئے ضروری عمل ہے، لیکن بدقسمتی سے کالجز، یونیورسٹیز میں اس کا فقدان پایا جاتا ہے، اگر طلبہ کی اخلاقی تربیت کی جاتی تو وہ ایسی مضر سرگرمیوں میں ملوث نہ پائے جاتے، تاہم حکومت کی جانب سے ایسے طلبہ اور منشیات فروش عناصر کیخلاف کارروائی کا فیصلہ خوش آئند ہے۔

آئی ایس او کے رہنما کا کہنا تھا کہ حکومت کو اس حوالے سے بلا امتیاز کارروائی کرنی چاہیے اور کوئی دبائو قبول نہیں کرنا چاہیے کیونکہ اکثر ایسے دھندوں کے پیچھے سیاسی عناصر ہوتے ہیں۔

Read more...
Read 240 times
News 03 January 2019

حکومت امیگریشن کی آڑ میں اسرائیلی شہریوں کی اجازت پر وضاحت پیش کرے،آئی ایس او پاکستان

اسرائیل کے ساتھ کسی بھی قسم کے تعلقات کو آئین پاکستان سے غداری تصور کرتے ہیں،آئی ایس او پاکستان

حکومتِ وقت اسرائیل کو تسلیم کرنے کی کوششوں سے باز رہے،مرکزی صدر

حکومت امیگریشن قوائد کی آڑ میں اسرائیلی شہریوں کی اجازت پر وضاحت پیش کرے اسرائیل کو تسلیم ناکرنے اور اسرائیل سے خفیہ یا اعلانیہ تعلقات کی بھرپور نفی کرتے ہوئے رسمی طور پر بیانیہ بھی جاری کرے َان خیالات کا اظہار مرکزی صدر آئی ایس او پاکستان سید قاسم شمسی نے لاہور میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ دوماہ سے اسرائیل نوازی کی جارہی ہے جس کو بعد میں غلطی قراردیا جاتا ہے حکومت وقت یہ جان لے کہ ہم اسرائیل کو کسی بھی صورت قبول نہیں کریں گے اسرائیلی طیارے کی آمد ِپارلیمنٹ میں اسرائیل کے حق میں تقریر ِمیڈیا پر اسرائیل کے حق میں ٹاک شو اور اب امیگریشن قوائد کی آڑ میں اسرائیلوں کی آمد کی اجازت دیناغلطی نہیں بلکہ ایک منظم سازش کے تحت اسرائیل کو مظور کرنے کی ناکام کوشش کی جاری ہے جس کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا ایسی گھناونی حرکتیں قائد اعظم اور علامہ اقبال کے نظریات و افکار کو نابود اور فلسطین کاز کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہیں۔

مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ آئی ایس او پاکستان کے کارکنان القدس کو ہرگز فراموش نہیں ہونے دیں گے۔ فلسطین کا مسئلہ آج بھی عالم اسلام کا اہم ترین مسئلہ ہے۔مسئلہ فلسطین صرف عرب دنیا کا ہی نہیں بلکہ پوری مسلم ا مہ اور انسانیت کا اولین مسئلہ ہے اور اس کے منصفانہ حل کے بغیر خطے سمیت عالمی امن قائم نہیں ہو سکتا ہے مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ فلسطین صرف فلسطینیوں کا وطن ہے، یہودیوں کا اس میں کوئی حق نہیں۔ہم ہرگز کسی بھی صورت اسرائیل کو تسلیم نہیں کریں گے۔وقت کے حکمران ایسے مکروہ فیصلوں سے باز رہیں۔

قاسم شمسی کا کہنا تھا کہ پاکستان بھر کی مذہبی تنظیمیں حکومت کی اس مزموم سازش کے خلاف متحد ہوکر اسرائیل کو قبول کرنے کی کوششوں کو ناکام بنائیں انہوں نے مزید کہا کہ قائد اعظم محمد علی جناح دنیا کے وہ واحد رہنما تھے کہ جنہوں نے فلسطین پر غاصبانہ طور پر قائم کی جانے والی جعلی ریاست اسرائیل کو قبول نہیں کیا تھا ۔ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ بانیان پاکستان کے افکار و اصولوں کے خلاف سرگرم عناصر سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے چاہے وہ حکومتی صفوں میں موجود ہوں یا اپوزیشن کی صفوں میں۔

پاکستان کے عوام اپنے عظیم قائدین کے سنہرے اصولوں کے مطابق فلسطین کو فلسطینی عوام کا وطن تسلیم کرتے ہیں اور اسرائیل کو بانیان پاکستان کے اصولوں کے مطابق جعلی اور غاصب ریاست سمجھتے ہیں اور اسرائیل کے ساتھ کسی بھی قسم کے تعلقات کو قطعا نظریہ پاکستان کی نفی اور آئین پاکستان سے غداری تصور کرتے ہیں۔


یاد رہے گزشتہ دنوں ایف آئی اے کی ویب سائٹ پر 7 ممالک کے شہریوں کو پاکستان آنے کی مشروط اجازت کے قوائد و ضوابط جاری کئے گئے تھے، نئی امیگریشن قوائد کی فہرست میں اسرائیل سمیت بھارت، بنگلہ دیش، بھوٹان، نائجیریا، فلسطین اور صومالیہ کا نام شامل کیا گیا تھا۔

Read more...
Read 239 times
News 17 December 2018

لاہور سمیت ملک کے دیگر ڈویژن میں آئی ایس او کےسالانہ کنونشنز کا تیسرا مرحلہ مکمل

ڈاکٹر علی رضا آئی ایس او لاہور ڈویژن کے دوسری بار صدر منتخب

لاہور ( پ ر) امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان لاہور ڈویژن کا دو روزہ کنونشن اختتام پزیرہوگیا۔لاہور کے مقام امامیہ کالونی میں کنونشن کے آخری روز برادر ڈاکٹر علی رضاکو مجلس عمومی کے اراکین نے کثرت رائے سے منتخب کیا کنونشن کے آخر میں آئی ایس او پاکستان کے مرکزی صدرقاسم شمسی نے نومنتخب ڈویژنل صدر سے حلف لیا۔

آئی ایس او پاکستان کے ڈویژنل کنونشز کا تیسرا مرحلہ مکمل ہوگیا ہے لاہور سمیت ملک کے دیگر ڈویژن کے صدور کا انتخاب گزشتہ روزاراکین عمومی نے کیا ۔پہلے اوردوسرے مرحلے میں کراچی سے محمد عباس، راولپنڈی کے مسلم عباس، نصیرآباد ڈویژن کے احسان لاشاری، ملتان کے عاطف حسین، سرگودھا ڈویژن کے صدر دانش علی، ساہیوال ڈویژن کے صدر فیضان علی، آزاد کشمیر سے رضی عباس، ایاز کھوسہ ڈی جی خان سے، شاہ حبیب پشاور ڈویژن صدر منتخب ہوئے۔

Read more...
Read 220 times
News 16 December 2018

فلسطینیوں کے پرامن'' واپسی مارچ ''کی قربانیاں جلد رنگ لائیں گی ،مرکزی صدر

فلسطین فائونڈیشن کے سیکرٹری جنرل ابو مریم کی وفد کے ہمراہ آئی ایس او پاکستان کے مرکزی دفتر آمد ،مرکزی صدر سے ملاقات۔

فلسطین فائونڈیشن پاکستان کے سیکرٹری جنرل ابو مریم نے وفد کے ہمراہ نو منتخب مرکزی صدر برادر قاسم شمسی سے ملاقات کی صدر منتخب ہونے پر نیک خواہشات کا اظہار بھی کیا دونوں رہنمائوں نے ملاقات میں فلسطین کی تازہ ترین صورتحال بھی تبادلہ خیال کیا۔

فلسطین فائونڈیشن کے رہنماء کا کہنا تھا کہ ہم کسی صورت مسئلہ فلسطین کو فراموش نہیں کرنے دیں گے پاکستان میں اسرائیل کو منظور کرنے کی جو مذموم کوششیں کی جاری ہیں اس کے لئے ہم وزیر اعظم اور صدر مملکت کے نام خط لکھا ہے۔ خط میں اس بات پہ زور دیا گیا ہے کہ پاکستان میں فلسطین مخالف پراپیگنڈا کی اجازت ہر گز نہ دی جائے اور اس کی روک تھام کے لئے سخت سے سخت اقدامات سے گریز نہ کیا جائے اور اس عنوان سے سنجیدہ نوعیت کے اقدامات کئے جائیں تا کہ مستقبل میں صہیونی ایجنٹوں کے ناپاک ارادے خاک ہو جائیں۔

ابو مریم کا مزید کہنا تھا کہ فلسطینی نوجوانوں میںچند ماہ سے جاری و اپسی مارچ کے بعد ایک نئی امید پیدا ہوئی ہے فسلطین میں اب ظلم کے مقابلے میں جدوجہد اور قربانیاں پہلے زیادہ ہوچکی ہیں انشاء اللہ وہ دن دور نہیں جب اسرائیل کا ناپاک وجود فلسطین سے ختم ہوجائے گا۔


مرکزی صدر سید قاسم شمسی کا کہنا تھا کہ آئی ایس او پاکستان نے ہمیشہ فلسطین کی حمایت کی ہے ماہ رمضان میں پاکستان بھر میں القدس ریلوں کا اہتمام کیا جاتا ہے اور بیت المقدس کی آزادی کا مطالبہ کیا جاتا ہے فلسطین میں صیہونی کی پسپائی خوش آئند ہے اور انشاء اللہ رہبر معظم کا یہ جملہ "اسرائیل کا 25سال میں زوال یقینی ہے" سچ ثابت ہوگا۔ مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ پاکستان کے عوام فلسطین کی عرب ریاست کی حمایت کرتے ہیں کہ جہاں ہمیشہ سے یہودی، عیسائی و مسلمان عرب شناخت کے ساتھ فلسطین میں بستے رہے ہیں جبکہ غیر فلسطینی یہودیوں کو جن کو باہر سے لاکر آباد کیا گیا ہے ان کا فلسطین پر کوئی حق نہیں۔

یہ فلسطینیوں کا حق ہے کہ وہ اپنے وطن واپس آئیں۔ وہ تمام فلسطینی کہ جن کو صہیونیوں نے فلسطین سے بے دخل کیا ہے اور وہ مختلف سرحدی ممالک میں پناہ گزین کیمپوں میں زندگی بسر کر رہے ہیں ان کے حق واپسی کی عالمی سطح پر بھرپور حمایت کی جائے تا کہ فلسطینی عرب اپنے وطن لوٹ آئیں اور آزاد ریاست کے قیام کو یقینی بنائیں۔

مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ مارچ سے شروع ہونے والے واپسی مارچ میں فلسطینیوں کی قربانیاں رنگ لائیں گی اور فتح مبین نصیب ہوگی۔ فلسطین فائونڈیشن کے سیکرٹر ی جنرل کے ہمراہ میڈیا کوارڈینٹر یاسر عباس ہمراہ تھے انہوں نے مرکزی صدر کو گلدستہ بھی پیش کیا۔

Read more...
Read 241 times

Picture Gallery